دیوپریاگ میں بادل پھٹنے سے بھاری نقصان ، پانی کے سیلاب میں کئی بھون زمین دوز

38 views
11 mins read

Devprayag Cloudburst: ٹہری ایس ایچ او نے واقعہ کی جانکاری دیتے ہوئے بتایا کہ اب تک بارہ تیرہ دکانیں تباہ ہوچکی ہیں ۔ ہم نے لوگوں کو الرٹ کردیا ہے ۔ ریسکیو کا کام تیزی سے چل رہا ہے ۔

یوپریاگ : اتراکھنڈ کے دیوپریاگ میں منگل کو بادل پھٹنے سے آئے سیلاب میں کئی بھون زمین دوز ہوگئے ۔ نگرپالیکا بھون اور آئی ٹی آئی بھون زمین دوز ہوگئے ہیں ۔ پانی کے ساتھ آئے ملبے میں آٹھ دکانیں بھی ڈوب گئی ہیں ۔ حالانکہ کورونا کرفیو کی وجہ سے جانی نقصان ہونے سے بچ گیا ۔ ملبے کی وجہ سے بھاگیرتھی ندی کی سطح آب بڑھ گئی ہے ۔ ٹہری ایس ایچ او نے واقعہ کی جانکاری دیتے ہوئے بتایا کہ اب تک بارہ تیرہ دکانیں تباہ ہوچکی ہیں ۔ ہم نے لوگوں کو الرٹ کردیا ہے ۔ ریسکیو کا کام تیزی سے چل رہا ہے ۔

بادل پھٹنے سے شانتا ندی میں آئی طغیانی سے شانتی بازار میں تباہی مچ گئی ۔ آئی ٹی آئی کی تین منزلہ عمارت پوری طرح سے منہدم ہوگئی جبکہ شانتا ندی سے متصل دس سے زیادہ دکانیں بھی سیلاب میں بہہ گئیں ۔ دیوپریاگ نگر سے بس اڈے کی جانب آنے والا راستہ اور پل پوری طرح سے بہہ گیا ۔ ملبے میں کسی کے دبنے کو لے کر ابھی تک کوئی بات واضح نہیں ہوسکی ہے ۔ کورونا کرفیو کی وجہ سے آئی ٹی آئی سمیت دکانوں کے بند رہنے سے بھاری جانی و مالی نقصان ہونے سے بچ گیا ۔

منگل کو شام تقریبا چار بجے دشرتھ پہاڑ پر بادل پھٹنے سے یہاں سے نکلنے والی شانتا ندی میں سیلاب آگیا ۔ بس اڈہ سے شانتی بازار ہوکر شانتا ندی بھاگیرتھ سے ملتی ہے ۔ سیلاب کی وجہ سے آئی ملبے نے شانتی بازار میں تباہی مچا دی ۔ آئی ٹی آئی کی تین منزلہ عمارت زمین دوز ہوگئی ۔ جائے واقعہ پر موجود سیکورٹی اہلکار دیوان سنگھ نے کود کر اپنی جان بچائی ۔ آئی ٹی آئی بھون میں موجود کمپیوٹر سینٹر ، پرائیویٹ بینک ، بجلی ، فوٹو وغیرہ کی دکانیں بھی منہدم ہوگئیں ۔
ادھر شانتا ندی پر بنا پل ، راستہ سمیت اس سے متصل زیورات ، کپڑے اور مٹھائی وغیرہ کی دکانیں بھی سیلاب کی نظر ہوگئیں ۔ شانتی بازار میں کروڑوں کا نقصان ہونے کا ابتدائی اندازہ ہے ۔ پولیس کو ابھی تک کسی کے مرنے کی اطلاع نہیں ہے ۔ اگر کورونا کرفیو نہیں ہوتا تو کافی زیادہ جانی نقصان ہوسکتا تھا ۔

This is Authorized Journalist of The Feedfront News cum Editor in Chief of Feedfront's Punjabi Edition and he has all rights to cover, submit and shoot events, programs, conferences and news related materials.
ਇਹ ਫੀਡਫਰੰਟ ਨਿਊਜ਼ ਦੇ ਅਧਿਕਾਰਤ ਪੱਤਰਕਾਰ ਅਤੇ ਫੀਡਫ਼ਰੰਟ ਪੰਜਾਬੀ ਐਡੀਸ਼ਨ ਦੇ ਮੁੱਖ ਸੰਪਾਦਕ ਹਨ। ਇਹਨਾਂ ਕੋਲ ਸਮਾਗਮਾਂ, ਪ੍ਰੋਗਰਾਮਾਂ, ਕਾਨਫਰੰਸਾਂ ਅਤੇ ਖ਼ਬਰਾਂ ਨਾਲ ਸਬੰਧਤ ਸਮੱਗਰੀ ਨੂੰ ਕਵਰ ਕਰਨ, ਜਮ੍ਹਾਂ ਕਰਨ ਅਤੇ ਸ਼ੂਟ ਕਰਨ ਦੇ ਸਾਰੇ ਅਧਿਕਾਰ ਹਨ।

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Previous News

رمضان المبارک کا آخری عشرہ، لیلۃ القد ، اعتکاف اور اس کی فضیلت: جانیں یہاں

Next News

کابل کے گرلس کالج میں بم دھماکوں سے مرنے والوں کی تعداد 58 ہوئی، مہلوکین میں 11 سے 15 سال کی لڑکیاں شامل، ISIS پر حملے کا شک